‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلد اول) جلد ۱

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلد اول) 0%

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلد اول) مؤلف:
زمرہ جات: متفرق کتب
صفحے: 156

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلد اول)

مؤلف: ‏آیة الله ابراهیم امینی
زمرہ جات:

صفحے: 156
مشاہدے: 9956
ڈاؤنلوڈ: 856


تبصرے:

جلد 1 جلد 2 جلد 3 جلد 4
کتاب کے اندر تلاش کریں
  • ابتداء
  • پچھلا
  • 156 /
  • اگلا
  • آخر
  •  
  • ڈاؤنلوڈ HTML
  • ڈاؤنلوڈ Word
  • ڈاؤنلوڈ PDF
  • مشاہدے: 9956 / ڈاؤنلوڈ: 856
سائز سائز سائز
‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلد اول)

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلد اول) جلد 1

مؤلف:
اردو

رجوع کیا کرتے تھے اور آپ کے فیصلے کو قبول کرتے تھے _

پیغمبر(ص) امین اور راست بازپر

بہت زیادہ درود و سلام ہو

جواب دیجئے

۱_ ہمارے پیغمبر (ص) جوانی میں کس نام سے مشہور ہوگئے تھے اورکیوں ؟

۲_ جب آپ(ص) مسجد کے دروازے سے داخل ہوئے تو لوگوں نے کیا کہا؟

۳_ تم دوستوںمیں سے کون سا آدمی امانت کی زیادہ حفاظت کرتا ہے؟

۴_ تم دوستوں میں سے کون سا آدمی زیادہ اعتماد کے لائق ہے ؟

۵_ آیا تمہارے دوست تم پر اعتماد کرتے ہیں اور کیا تمہارے فیصلے کو قبول کرتے ہیں؟

۶_ کیا تم امانت داری میں آنحضرت(ص) کی پیروی کرتے ہو؟

۶۱

گیارہواں سبق

دین اسلام آسمانی ادیاں میں سب سے بہتر اور آخری دین ہے

دین اسلام بہترین اور کامل ترین دین ہے _ خدائے مہربان نے حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ سلم کے وسیلے سے ہمارے لئے دین اسلام بھیجا تا کہ ہم اللہ کی پرستش کریں اور ہمیں زندگی کے بہترین طریقے بتلائے ہیں _ خداوند عالم فرماتا ہے جو دین اسلام کو قبول نہ کرے بلکہ کسی اور دین کو اپنے لئے انتخاب کرے تو وہ اس سے قبول نہ کیا جائے گا اور آخرت میں بیچارہ اور نقصان میں رہے گا دین اسلام ہمیں بتلاتا ہے کہ:

____ کس طرح خدا کو پہچانیں

____ ماں باپ سے کیسا سلوک کریں

____ کون سے کام انجام دیں کہ دنیا اور آخرت میں سعادت مند ہوجائیں_

دین اسلام ہمیں بتلاتا ہے کہ:

____ کون سے کام حلال ہیں کہ جنکو ہم انجام دے سکتے ہیں

۶۲

____ اور کون سے حرام ہیں جو ہمیں انجام نہیں دینے چاہئیں

مسلمان کون ہے :

۱_ مسلمان وہ ہے جو خدائے وحدہ لا شریک اور آخرت پر ایمان رکھتا ہو

۲_ حضرت محمد (ص) کو آخری پیغمبر مانتا ہو

۳_ تمام کاموں میں اللہ اور محمد (ص) کے دستور کو تسلیم کرتا ہو

۶۳

بارہواں سبق

قرآن اللہ کا پیغام ہے

قرآن میں خدا کا پیغام اوراس کے قوانین ہیں قرآن کو خدانے پیغمبر اسلام (ص) کے واسطے سے ہمارے لئے اور تمام جہاں کے لوگوں کے لئے نازل کیا ہے مسلمان کو چاہیے کہ وہ قرآن پڑھنا سیکھے اور اس کے معانی کو سمجھے اور دوسروں کو بتلالے اور زندگی کے صحیح راستے کو قرآن سے سیکھے

قرآن مسلمانوں کو زندگی کا بہترین اصول بتلاتا ہے _ خداشناسی اوراس کی عبادت کے راستے بتلاتا ہے

مسلمانوں کو چاہیے کہ وہ تمام کاموں میں قرآن کی پیروی کریں اور اس آسمانی کتاب سے زندگی کا درس لیں جو قرآن کا پیرو کار ہوگا وہ اس دنیا میں بھی با عزت اور آزاد زندگی بسر کرے گا اور آخرت میں بھی اور بہترین زندگی گذارے گا ہمارے پیغمبر(ص) نے فرمایا ہے : تم میں بہترین انسان وہ ہے جو قرآن کو یاد کرے اور دوسروں کو یادلائے _ نیز فرمایا جو شخص قرآن پر عمل کرے گا بہشت میں جائے گا اور جو قرآن سے روگردانی کرے گا جہنم میں جائے گا

جواب دیجئے

۱_ دین اسلام کسے کہتے ہیں اور دین اسلا م ہمیں کیا سکھایا ہے ؟

۶۴

۲_ آخرت میںکون نقصان میں ہوگا؟

۳_ کن کاموں کو حلال کہتے ہیں اور کن کاموں کو حرام کہتے ہیں ؟

۴_ مسلمان کون ہے اور مسلمان کس چیز کے سامنے سر تسلیم خم کرتا ہے ؟

۵_ قرآن کس کا کلام ہے ؟

۶_ تم نے قرآن سیکھنے کیلئے کون سا پروگرام بنایا ہے؟

۷_ جو شخص قرآن پر عمل کرے وہ کیسے زندگی بسر کرے گا ؟

۸_ لوگوں میں سے بہترین لوگ کون ہیں؟

۶۵

قرآن

فارسی نظم

قرآن کہ کتاب آسمانی است

روشن گر راہ زندگانی است

قرآن کہ نشان دہد رہ راست

برنامہ زندگانی ماست

خیر دو جہان برای انسان

حاصل شود از عمل بہ قرآن

فرمودہ پیغمبر: ای مسلمان:

ہر کس کہ عمل کند بہ قرآن

قرآن ہمہ جا مقابل اوست

گلزار بہشت ،منزل اوست

امّا بہ جنہم است ، جایش

آنکس کہ نکرد اعتنایش

این است کتابی دینی ما

برنامہ جاودانی ما ...:

ماییم ہمہ مطیع قرآن

ماییم نگاہدارش از جان

حبیب اللہ چایچیان

۶۶

تیرہواں سبق

باغ جل گیا اور کیوں جلا؟

چند بھائی ایک جگھ بیٹھے ہوے آپس میں گفتگو کررہے تھے کہ کل صبح سویرے باغ جائیں گے تا کہ باغ سے میوے لائیں اور اس میں کسی کو کچھ بھی نہ دیں _ ان بھائیوں میں ایک بھائی جو نیک تھا کہنے لگا : بھائیو اللہ کے حکم کو نہ بھولو اور محتاجوں کی مدد کرو_ دوسرا بھائی کہنے لگا _ پھر تم بول اٹھے اگر پھر تم بولو گے تو تمہیںماریں گے _ تم کیوں ان کاموں میں دخل دیتے ہو؟ جب سب بھائی سوگئے تو آسمان سے یک بجلی چمکی اور آسمانی بجلی نے تمام میوے اور درختوں کو جلا کر خاک کردیا _ جب صبح ہوئی اور وہ جاگے تو کہنے لگے کہ جلدی کروچل کر میوہ چنیں اور آواز بلند نہ کرو کہ کہیں کوئی خبر دار ہوجائے _ وہ جب باغ تک پہنچے تو ایک کہنے لگا عجیب بات ہے یہ باغ ہمارا تو نہیں لگتا _ دوسرے نے کہا نہیں یہی ہمارا باغ ہے _ اس نیک آدمی نے کہا میں نے نہیں کہا تھا کہ خدا کو نہ بھولو اوراس کے دستور پر عمل کرو _ یہ تمہاری سزا ہے اور آخرت کا عذاب تمہارے لئے اس سے سخت تر ہے _

۶۷

چودھواں سبق

اصحاب فیل

قدیم زمانے سے کعبہ عبادت گاہ رہا ہے _ لوگ دور اور نزدیک سے عبادت اور کعبہ کی زیارت کے لئے آیا کرتے تھے _ مكّہ محترم اور آباد شہر رہا ہے یمن کا حاکم ابرہہ نامی ایک عیسائی تھا اسے حسد لاحق ہوا اور اس نے حسد کی وجہ سے ایک بہت عمدہ معبد یمن میں بنانے کا حکم دیا _ اس کے درودیوار کو سونے اور چاندی اور بہت قیمتی پتھروں سے بنایا گیا اور بہت قیمتی فرش اس میں بچھائے گئے _ بہت زیبا پردے اسے پر لٹکائے گئے خوبصورت چراغ اس میں جلائے گئے _ اس کے بعد اس نے اعلان کیا کہ یہ معبد سب سے بڑا اور خوبصورت ہے اس کی زیارت کا ثواب سب سے زیادہ ہے _ اب تمام لوگوں کو اس کی زیارت کو آنا چاہیئے اب کسی کو حق نہیں پہنچتا کہ وہ مکہ کی زیارت کے لئے جائے لیکن لوگوں میں ان باتوں کا کوئی خاص اثر نہ ہو اور لوگ اس کے بنائے ہوئے معبد کی طرف متوجہ نہ ہوئے بلکہ اس کی بے حرمتی بھی کی ابرہہ اس کی وجہ سے برانگیختہ ہوا اور کہنے لگا کہ جب تک کعبہ موجود ہے ہمارے معبد کی زیارت کو کوئی نہیں آئے گا ضروری ہے کہ خانہ کعبہ کو گرادیا جائے تا کہ لوگ ناامید ہوجائیں اور گروہ در گروہ پھر لوگ ہمارے معبد کی طرف آنے لگیں _ لوگوں نے اس سے کہا کہ تم لوگوں کے دین اور عقیدہ سے سروکار

۶۸

نہ رکھو _ خانہ کعبہ اللہ تعالی کے حکم سے جناب ابراہیم علیہ السلام کے دست مبارک سے بنا ہے _ لوگوں کو اس کی عبادت اور زیارت کیلئے آزاد رہنے دو _ لیکن لوگوں کی نصیحت ابرہہ کہ دل پر اثر انداز نہ ہوئی _ ابرہہ نے کہا کہ میرا معبد بڑا اور اچھا ہے لوگوں کو چاہیے کہ وہ یہاں عبادت کے لئے آئیں اسے سوائے خانہ کعبہ کے خراب کرنے کے اور کوئی چارہ نظر نہیں آتا تھا _ ایک بہت بڑا لشکر تیا رکیا _ لشکر کا ایک حصّہ جنگی ہاتھیوں پر سوار ہوا اور خود ابرہہ بھی ایک جنگی ہاتھی پر سوار ہوا اور مكّہ کی طرف روانہ ہوا _ لوگوں کے ایک گروہ نے خانہ کعبہ کے دفاع کی کوشش کی لیکن ابرہہ کی فوج سے شکست کھا گئے _ مكّہ والوں نے دیکھا کہ وہ ابرہہ کی فوج کا مقابلہ نہیں کر سکتے لہذا پہاڑوں اور بیابانوں کی طرف فرار کرگئے جب ابرہہ کی فوج مكّہ کے نزدیک پہنچی تو ابرہہ کا ہاتھی زمین پر لیٹ گیا انتہائی کوشش کے بعد بھی ہاتھی زمین سے نہ اٹھا _ اسی حالت میں بہت زیادہ پرندے آسمان پر ظاہر ہوئے مکہ کی فضا ان سے سیاہ ہوگئی _ ہر ایک پرندے لئے ایک بھاری اور گرم پتھر چونچ میں اور دو پتھر پنجے میں لے رکھے تھے _ پرندوں کا یہ ٹڈی دل آہستہ آہستہ ابرہہ کی فوج کے اوپر آپہنچا اور ایک دفعہ سب نے ابرہہ کی فوچ پر حملہ کردیا _ اور ان کو سنگسارکرنا شروع کردیا _ ابرہہ کی فوج کو شکست ہوئی اور وہ سب کے سب ہلاک ہوگئے _ تمام فوج سے صرف ایک آدمی زندہ بچا اور اس نے اپنے آپ کو بہت جلدی نجاشی بادشاہ تک پہنچایا اور فوج کے تباہ ہونے کی داستان اسے سنائی _ نجاشی نے تعجب سے کہا یہ کیسے پرندے تھے _ کہ انہوں نے تمام فوج کو ہلاک کردیا _ اسی حالت میں ان پرندوں میں سے ایک پرندہ ظاہرہوا _ اس شخص نے نجاشی سے کہا کہ اس قسم کے پرندے تھے وہ پرندہ نزدیک

۶۹

آیا اور اس شخص کے سر کے اوپر اپنی چونچ کا پتھر گرادیا ان ظالموں کا یہ آخری فرد بھی نجاشی کے سامنے زمین پر گرا اور ہلا ک ہوگیا _ ابرہہ خدا پرستی اور توحید کے ساتھ مقابلہ کرنا چاہتا تھا لیکن خدا نے چاہا کہ خانہ کعبہ ہمیشہ کے لئے باقی رہے اور پیغمبر وہاں سے توحید کی آواز ساری دنیا کے کانوں تک پہنچائیں ابرہہ اور اس کی فوج اپنی سزا کو پہنچے اور وہ دنیا کے لئے عبرت قرار پائے _

خداوند عالم نے اصحاب فیل کا قصّہ ایک چھوٹے سورے میں بیان فرمایا ہے یہ قصّہ اتنا مشہور ہوا کہ اس سال کا نام عام الفیل رکھا گیا _ ہمارے پیغمبر محمد صلی اللہ علیہ و آلہ بھی اسی سال متولد ہوئے تھے _

جواب دیجئے

۱_ ابرہہ کا کون سا مذہب تھا اور وہ خانہ کعبہ کو کیوں ویران کرنا چاہتا تھا؟

۲_ جب ابرہہ مکہ کی طرف حرکت کرنا چاہتا تھا تو لوگوں نے اسے کیا کہا؟

۳_ ہم مسلمانوں کا قبلہ خانہ کعبہ کس نے بنایا اور کس کے حکم سے بنایا؟

۴_ حبشہ کے بادشاہ کا کیا نام تھا اور اس کے ایک فوجی پر کیا گذری؟

۵_ ہمارے پیغمبر (ص) کس سال متولد ہوئے ؟

۶_ قرآن سے سورہ فیل نکال کر پڑھئے؟

۷_ اس قصہ سے جو عبرت حاصل ہوتی ہے اسے اپنے دوستوں کو بیان کیجئے ؟

۷۰

پندرہواں سبق

دین کیا ہے؟

مہربان و حکیم او رعلیم خدا نے ہماری سعادت کے لئے دستور بھیجے ہیں _ اور یہ دستور پیغمبر (ص) اسلام ہمارے لئے لائے ہیں _ پیغمبر اسلام(ص) نے خداشناسی کے راستے اور اچھی زندگی کے طریقے ہمیں بتلائے ہیں:

پیغمبروں نے ہمیں بتایا :

کہ اپنے دوستوں سے کس قسم کا سلوک کریں _

ماں باپ کا کس طرح احترام کریں _

اپنے استاد کا کس طرح شکریہ ادا کریں _

پیغمبروں نے ہمیں بتایا کہ :

اپنے محبوب خدا سے کیسے گفتگو کریں _

کون سے کام انجام دیں کہ اللہ ہم سے راضی ہوجائے اپنی اخروی زندگی کے لئے کیا چیزیں ضروری ہیں _

دین کیا ہے :

وہ دستور ... جو پیغمبر (ص) ہماری زندگی کیلئے

۷۱

لائے ہیں اسے دین کہا جاتا ہے _

دین دار کون ہے :

جو شخص خدا اور آخرت پر ایمان رکھتا ہو اور پیغمبروں کے دستور و احکام پر عمل کرتا ہو اسے دیندار کہا جاتا ہے خدا دیندار لوگوں کو دوست رکھتا ہے اور انہیں اچھی جزا دیتا ہے دیندار لوگ اس دنیا میں بھی اچھی زندگی بسر کرتے ہیں اور آخرت میں بھی خوش بخت ہوں گے _

سوالات

۱_ اللہ کا اپنے دستور کو بھیجنا کس لئے ہوتا ہے ؟

۲_ یہ دستور کون حضرات ہمارے لئے لاتے ہیں؟

۳_ پیغمبروں نے ہمیں کیا کیا بتایا ہے؟

۴_ دین کسے کہتے ہیں؟

۵_ کس شخص کو دیندار کہا جاتا ہے ؟

۶_ دیندار لوگ اس دنیا میں اور آخرت میں کس طرح کی زندگی بسر کرتے تھے؟

۷_ خداوند عالم دیندار لوگوں کے ساتھ کس طرح پیش آتا ہے ؟

۷۲

سولہواں سبق

دین اسلام بہترین زندگی کیلئے بہترین دین ہے

ہمارے پیغمبر حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و آلہ _ لوگوں سے فرمایا کرتے تھے کہ میں دنیا اور آخرت کی تمام بھلائی تمہارے لئے لایا ہوں _ خدا نے مجھے حکم دیا ہے کہ دنیا کے تمام لوگوں کو دین اسلام کی طرف بلاؤں _

دین اسلام کیا ہے؟

وہ تمام دستور جو محمد (ص) مصطفی اللہ کے حکم سے لائے ہیں اسے '' دین اسلام'' کہا جاتا ہے _ دین اسلام بہترین اور کامل ترین دین ہے _

مسلمان کون ہے ؟

مسلمان وہ ہے جو تمام کاموں کو پیغمبر اسلام(ص) کے لائے ہوئے الہی حکم کے مطابق بجا لائے

۷۳

ہماری دینی کتاب کا کیا نام ہے

ہماری دینی کتاب کا نام قرآن ہے _ قرآن زندگی کا وہ لائحہ عمل ہے جسے اللہ نے ہمارے لئے بھیجا ہے _ ہم مسلمان قرآن کااحترام کرتے ہیں یعنی اس کے دستور پر عمل کرتے ہیں _

قرآن اللہ کی آخری آسمانی کتاب ہے

سوالات

۱_ پیغمبر اسلام (ص) لوگوں سے کیا فرمایا کرتے تھے؟

۲_ اللہ نے پیغمبر اسلام (ص) کو کیا حکم دیا تھا؟

۳_ کیا دین اسلام دنیا کے بعض لوگوں کے لئے ہے؟

۴_ دین اسلام کسے کہا جاتا ہے؟

۵_ دین اسلام کس طرح کا دین ہے؟

۶_ مسلمان کون ہے؟

۷_ ہم مسلمانوں کی کتاب کا کیا نام ہے؟

۸_ ہم کس طرح قرآن کا احترام کرتے ہیں؟

یہ جملے مکمل کیجئے

۱_ دین اسلام تمام لوگوں ... ہے

۷۴

۲_ وہ دستور کہ جسے حضرت محمد (ص) لائے ہیں ... کہتے ہیں

۳_ قرآن ... ہے اور زندگی کا ... ہے

۴_ مسلمان وہ ہے جو تمام کام ... ... سے لے

۵_ ہم مسلمان قرآن ... احترام کرتے ہیں اور کوشش کرتے ہیں کہ اللہ ... پر عمل کریں

۷۵

چوتھا حصّہ

امامت

۷۶

پہلا سبق

امام

پیغمبر خدا کی طرف سے آتے ہیں تا کہ لوگوں کی رہبری کریں اور اللہ کے دستور و احکام کو لوگوں تک پہنچائیں _ چونکہ پیغمبر ہمیشہ لوگوں کے درمیان نہیں رہے _ لہذا ان کے لئے ضروری تھا کہ وہ اپنے بعد اپنے جانشین مقرر کریں جو لوگوں کی رہبری کرے اور دین کے احکام اور دستور کی حفاظت کرے اور اسے لوگوں تک پہنچاتا رہے _ جو شخص اللہ کی طرف سے لوگوں کی رہبری کے لئے منتخب کیا جائے اسے '' امام'' کہا جاتا ہے _ امام لوگوں کا رہبر اور دین کا محافظ ہوتا ہے

سوالات

۱_ امام کسے کہتے ہیں؟

۲_ امام کیا کرتا ہے؟

۳_ امام کس کا جانشین ہوتا ہے؟

۴_ ہمیں امام کی ضرورت کیوں ہے ؟

۵_ امام کو کون منتخب کرتا ہے؟

۷۷

دوسرا سبق

امام دین کا رہبر اور پیغمبر (ص) کا جانشین ہوتا ہے

امام دین کا رہبر اور پیغمبر (ص) کاجانشین ہوتا ہے _ پیغمبر کے بعد اس کے کام انجام دیتا ہے امام لوگوں کا پیشوا ہوتا ہے _ امام دین کے قانون اور اس کے دستور کا عالم ہوتا ہے _ اسے لوگوں تک پہنچاتا ہے _ امام بھی پیغمبر (ص) کی طرح کامل رہبر ہوتا ہے اور ان تمام امور کو جانتا ہے جو ایک رہبر کے لئے ضروری ہیں _ اسکو خدا کی مکمل معرفت ہوتی ہے وہ دین کے حلال و حرام اور _ بری اور اچھے اخلاق کو جانتا ہے _ قیامت اور جنّت و جہنم کے حالات سے آگاہ ہوتا ہے _ اللہ تعالی کی پرستش اور نجات کے راستوں کو جانتا ہے علم و دانش میں تمام لوگوں سے بالاتر ہوتا ہے _ کوئی بھی اس کے مرتبے کو نہیں پہنچتا اگر امام جاہل ہو یا بعض احکام الہی کو نہ جانتا ہو تو وہ نہ تو ایک کامل رہبر بن سکتا ہے اور نہ ہی پیغمبر کے کاموں کا ذمہ دار بن سکتا ہے خداوند عالم نے پیغمبر کے ذریعہ تمام علوم امام کو عطا کئے ہیں _

امام دین کا محافظ اور نگہبان ہوتا ہے

امام پیغمبر (ص) کا جانشین ہوتا ہے اور پیغمبر (ص) کے بعد پیغمبر(ص) کے تمام کام انجام دیتا ہے _

۷۸

تیسرا سبق

بارہ امام

ہمارے پیغمبر کے بعد بارہ امام ہیں جو ایک دوسرے کے بعد منصب امامت پر فائز ہوئے

۱____ پہلے امام ____ حضرت علی علیہ السلام

۲____ دوسرے امام ____ حضرت حسن علیہ السلام

۳____ تیسرے امام ____ حضرت حسین علیہ السلام

۴____چوتھے امام ____ حضرت زین العابدین علیہ السلام

۵____ پانچویں امام ____ حضرت محمد باقر علیہ السلام

۶____ چھٹے امام ____ حضرت جعفر صادق علیہ السلام

۷____ ساتویں امام ____ حضرت موسی کاظم علیہ السلام

۸____آٹھویں امام ____ حضرت علی رضا علیہ السلام

۹____ نویں امام ____ حضرت محمد تقی علیہ السلام

۱۰____ دسویں امام ____ حضرت علی نقی علیہ السلام

۱۱____ گیارہویں امام ____ حضرت حسن عسکری علیہ السلام

۱۲____ بارہویں امام ____ حضرت حجت علیہ السلام

۷۹

پہلاسبق

پہلے امام

حضرت علی علیہ السلام

پہلے امام حضرت علی علیہ السلام ہیں _ ہمارے پیغمبر نے حکم خدا کے تحت اپنے بعد حضرت علی علیہ السلام کو لوگوں کا امام اور پیشوا معین فرمایاہے _ حضرت علی (ع) رجب کی تیرہ ''۱۳'' کو شہر مکہ میں خانہ کعبہ میں پیدا ہوئے _ آپ(ص) کے والد کا نام ابوطالب '' علیہ السلام'' اور والدہ کا نام فاطمہ بنت اسد ہے _ حضرت علی علیہ السلام پیغمبر(ص) اسلام کے چچازاد بھائی ہیں _ بچپن میں پیغمبر کے گھر میں آئے اور وہیں پرورش پائی _ پیغمبر کے زیر نگرانی آپ کی تربیت ہوئی _ اور زندگی کے آداب کو آپ سے سیکھا _ حضرت علی علیہ السلام عقلمند اور ہوشیار فرزند تھے _ پیغمبر اسلام (ص) کے فرمان کو اچھی طرح سمجھتے تھے _ اور اس پر عمل کرتے تھے _ کبھی جھوٹ نے بولتے تھے _ گالیاں نہیں دیتے تھے _ مؤدب اور شیرین کلام تھے _ لوگوں کا احترام کرتے تھے _ پاکیزہ اور صحیح انسان تھے _ پیغمبر کے کاموں میں مدد کرتے تھے_ بہادر اور قوی جوان تھے _ بچوں کے دوست اور ان پر مہربان تھے _ ان کو آزار نہیں پہنچاتے تھے _ لیکن کسی کو بھی جرات نہ ہوتی کہ آپ کو کوئی اذیت دے سکے _ پیغمبر اسلام سال میں ایک مہینہ کوہ حراء پر جاتے تھے اور وہاں عبادت کرتے تھے حضرت علی (ع) ان دنوں آپ کے لئے پانی اور غذا لے جاتے _ حضرت علی (ع) فرمایا کرتے تھے کہ میں کوہ حراء میں پیغمبر (ص) کے ساتھ رہتا تھا اور پیغمبری کی علامتیں آپ میں دیکھا تھا _ حضرت علی علیہ السلام پہلے مرد تھے جنہوں نے اسلام کا اظہار کیا _آپ کی عمر

۸۰