‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلدسوم) جلد ۳

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلدسوم) 0%

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلدسوم) مؤلف:
زمرہ جات: متفرق کتب
صفحے: 302

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلدسوم)

مؤلف: ‏آیة الله ابراهیم امینی
زمرہ جات:

صفحے: 302
مشاہدے: 15655
ڈاؤنلوڈ: 953


تبصرے:

جلد 1 جلد 2 جلد 3 جلد 4
کتاب کے اندر تلاش کریں
  • ابتداء
  • پچھلا
  • 302 /
  • اگلا
  • آخر
  •  
  • ڈاؤنلوڈ HTML
  • ڈاؤنلوڈ Word
  • ڈاؤنلوڈ PDF
  • مشاہدے: 15655 / ڈاؤنلوڈ: 953
سائز سائز سائز
‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلدسوم)

‏تعلیم دین ساده زبان میں(جلدسوم) جلد 3

مؤلف:
اردو

عمرو بن عبدود جو بہت بڑا بہادر تھا او رتنہا ایک ہزار سوار سے جنگ کیا کرتا تھا_ جنگ احزاب (جنگ خندق) میں جب حضرت علی علیہ السلام سے لڑنے آیا تو آپ نے اس کو قتل کردیا جب کہ آپ کی عمر اس وقت تقریباً بیس سال کی تھی_ کفّار اور بت پرستوں کے اکثر سردار حضرت علی علیہ السلام کے قوی اور توانا ہاتھوں سے ہلاک ہوئے ہیں_

حضرت علی علیہ السلام اپنے زمانہ میں سب سے زیادہ عبادت گزار تھے، آپ رات میں نماز شب اور دعا میں مشغول رہتے، رات کی تاریکی میں خدا سے راز و نیاز کرتے اور گریہ و بکا کرتے تھے دس سال کی عمر میں پیغمبر اسلام (ص) پر ایمان لانے کا اظہار کیا اور محراب عبادت میں سحر کے وقت نماز کی حالت میں شہادت پائی_

حضرت علی علیہ السلام بچپن سے پیغمبر اسلام (ص) کے ساتھ سفر و حضر میں رہے اور پیغمبر (ص) کے علوم سے بہرہ مند ہوتے تھے، آپ پیغمبر اسلام(ص) کے بعد سب سے زیادہ علم رکھتے تھے لوگ آپ سے کسب علم کیا کرتے تھے، آپ کے فیصلے لوگوں کو حیرت میں ڈال دیتے تھے، آپ سے ہزاروں حدیثیں مروی ہیں اور آپ کا مجموعہ کلام نہج البلاغہ، علم و دانش اور ادب و معنویت کا ایک بیکراں دریا ہے_

پیغمبر اسلام (ص) نے آپ کے بارے میں فرمایا:

'' میں علم کا شہر ہوں اور علی (ع) اس کا دروازہ ہیں جو شخص شہر میں داخل ہونا چاہتا ہے اسے چاہیئے کہ دروازہ سے داخل ہو''_

آپ کی انھیں آسمانی علوم اور معنوی صلاحیتوں کی وجہ سے پیغمبر(ص) نے آپ کو ولایت و رہبری کے منصب پر فائز ہونے کا لوگوں کے سامنے اعلان کیا اور آپ کے

۲۸۱

حق میں فرمایا کہ:

' ' جس نے میری ولایت کو قبول کیا ہے اس کے ولی علی (ع) ہیں''_

حضرت علی علیہ السلام محنتی و فعّال اور زحمت کش انسان تھے آپ نے اپنے ہاتھ سے کافی کھجوروں کے بڑے باغ بنائے اورگہرے کنویں کھودے، آپ دن و رات محنت کرتے تھے لیکن مال و دولت کے اکٹھا کرنے کے لئے نہیں بلکہ اپنی زندگی کے معاش کے پورا کرنے اور لوگوں کی حاجت روائی کے لئے ایسا کرتے تھے_

آپ جو کچھ کماتے تھے اسے راہ خدا میں خرچ کردیتے تھے ، لذیذ اور مختلف اقسام کی غذا کھانے سے پرہیز کرتے تھے، آپ کا لباس اورخوراک عام فقراء جیسا ہوا کرتا تھا، آپ بہت سختی و تنگی میں زندگی بسر کیا کرتے تھے ،اپنی آمدنی کو یتیموں ، بیوہ عورتوں اور محتاجوں میں تقسیم کردیتے تھے، ماں و دولت اورجاہ و حشم سے آپ کو ی وابستگی نہ تھی اور جو کچھ کرتے تھے وہ خلق خدا کی خدمت ل ے کرتے تھے _ حضرت علی علیہ السلام بہت خوش اخلاق اور مہربان تھے، کسی کا مذاق نہیں اڑاتے تھے، آپ کے دین مبارک سے ناروابات نہ نکلتی تھی ، آپ بہت متواضع تھے لیکن اس کے باوجود رعب و ہیبت کے مالک تھے ، ظالموں کے سامنے بہت سخت اور مظلوموں کے ل ے ہمدرد تھے_

مجرموں اور گناہکاروں کو حتی الامکان عفو کرتے تھے اسے سزا پر ترجیح دیتے تھے اور ظالموں کو اس لرے قتل کرتے تھے یا مجروں سے اس ل ے قصاص لیتے تھے تا کہ معاشرے میں امن و امان برقرار رہے _

۲۸۲

حضرت علی علیہ السلام کی شخصیت مثالی شخصیت تھی ، تمام انسانی کمالات آپ میں جمع تھے ، ایسا شخص نہ صرف مسلمانوں کے ل ے بلکہ ہر آگاہ اور روشن فکر انسان کے ل ے نمونہ عمل ہے _

پیغمبر اکرم (ص) نے آپ کے بارے میں فرمایا:

قال رسول الله صلی الله علیه و آله : انا مدینة العلم و علی بابها فمن اراد العلم فلیاته من بابه (۱)

''میں علم کا شہر ہوں اور علی (ع) اس کا دروازہ میں جو شہر میں آنا چاہتا ہے اسے چاہی ے کہ اس کے دروازہ سے آئے ''_

____________________

۱_ کتاب مجمع الزوائد جلد ۹

۲۸۳

سوالات

مندرجہ ذیل سوالات کے متعلق سوچو اور ان کے جوابات دو اور اپنی صفات و کردار حضرت علی (ع) کے صفات و کردار سے موازنہ کرو اورارتقاء کی منزل تک پہونچنے کے لئے کوشش کرو _

۱_ حضرت علی علیہ السلام کا لباس اور آپ کی خوراک کیسی تھی؟

۲_ آپ کا اخلاق کیسا تھا؟

۳_ ستم گروں کے ساتھ کیساسلوک کیا کرتے تھے اور مظلوموں کے ساتھ آپ کا رویہ کیسا ہوتا تھا؟

۴_ پیغمبر اسلام (ص) نے آسمانی علم حاصل کرنے کے لئے کون سا راستہ معین کیا ہے ؟

۵_ حضرت علی علیہ السلام کی بہادری اور شجاعت کیسی تھی ؟ آپ کی شجاعت کے دو نمونے پیش کرو _

۶_ آپ کا جہاد سے عشق کیسا تھا؟ آپ کے اس سے متعلق دو جملے نقل کرو _

۷_ کیا کسی سے قصاص لیتے تھے ؟ مجرم کو معاف کردینا زیادہ پسند کرتے تھے یا سزادینا؟

۸_ حضرت علی علیہ السلام نے پیغمبر اسلام (ص) پر ایمان کا اظہار کس عمر میں کیا تھا اور کس طرح آپ نے پیغمبر (ص) کی مدد کی تھی ؟

۲۸۴

۹_ پیغمبر اسلام (ص) نے اپنے رشتے داروں کی دعوت میں حضرت علی علیہ السلام کو کیا منصب عنایت فرمایا تھا؟

۱۰_ ہجرت کی رات پیغمبر اسلام (ص) کی کس طرح مدد کی تھی ؟

۱۱_ جنگ احد میں پیغمبر اسلام (ص) کی کس طرح مدد کی تھی اور فرشتہ نے آپ کے بارے میں کیا کہا تھا؟

۲۸۵

بارہویں امام (ع) کی غیبت اور ظہور

امام زمانہ علیہ السلام پندرہ شعبان سنہ ۲۵۵ ھ صبح کے وقت شہر سامرہ میں پیدا ہوئے آپ کا اسم مبارک محمد اور لقب مہدی ، قائم ، امام زمانہ اور ولی عصر ہے آپ کے والد ماجد حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام ہیں_

آپ کو علم ہوگا کہ ظالم خلیفہ عباسی حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام کو ان کے والدکے ہمراہ سامرہ لے گیا تھا اور آپ کو ایم محلہ میں جو فوجی مرکز بھی تھا زیر نظر رکھا تھا اور کبھی آپ کو قید خانہ میں بھی ڈال دیتا تھا یہاں تک کہ اٹھائیس سال کے سن میں آپ کو شہید کردیا نیز وہ ہمیشہ آپ کے جانشین کی تلاش میں رہتا تھا تا کہ انھیں بچپن میں ہی قتل کردے لہذا امام زمانہ (ع) کی ولادت بہت مخفی طور سے کوئی اور آپ خدا کے حکم سے بچپن سے ہی لوگوں کی نظروں سے غائب رہے _

پیغمبر اسلام (ص) اور ائمہ اطہار علیہم السلام نے پہلے ہی سے مسلمانوں کو خبر دے دی تھی کہ مہدی (ع) گیارہویں امام کے فرزند مجبورا نظروں سے غائب رہیں گے _

حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام اس بارے میں فرماتے ہیں کہ :

'' ہمارے مہدی کے لئے دو غیبت ہیں ایک مختصر اور دوسری طویل، مختصر غیبت میں مخلص شیعوں کو آپ کی جائے سکونت کا علم ہوگا لیکن غیبت کبری میں کسی کو بھی آپ کے

۲۸۶

محل سکونت کی اطلاع نہ ہوگی مگر چند آپ کے نزدیک ترین دوستوں کو '' _

حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام نے خدا کے حکم سے اپنے اصحاب کے ایک گروہ کو اپنے فرزند بارہویں امام (ع) کا دیدار کرایا تھا اور یہ فرمایا تھا کہ :

'' خدا نے میرے بعد آپ کو امامت کے لئے معین کیا ہے ''_

بارہویں امام (ع) اپنے والد کی شہادت کے بعد بہت کم دکھائی دیتے تھے اور اکثر نظروں سے غائب رہا کرتے تھے_

۲۸۷

غیبت صغری اور کبری :

امام مہدی علیہ السلام کے لئے دو غیبت ہیں پہلی غیبت صغری اور دوسری غیبت کبری ہے ، غیبت صغری تقریبا ۵۹ سا ل تک رہی ، آپ کے والد کی شہادت کے بعد جو سنہ ۲۶۰ میں ہوئی غیبت صغری شروع ہوئی اور اس کا سلسلہ سنہ ۲۲۹ ھ تک رہا _

امام زمانہ (ع) اس مدت میں عام لوگوں کی نگاہوں سے غائب تھے لیکن لوگوں کا ربط امام زمانہ (ع) سے چار آدمیوں کے واسطہ سے کہ جنھیں آپ نے اپنا نائب اور وکیل معین کیا تھا ، رہا کرتا تھا ، مومنین ان وکیلوں کے ذریعہ امام زمانہ (ع) سے رابطہ قائم کرتے تھے آپ کے پاس خطوط بھیجتے تھے اور آپ ان کے جواب دیتے تھے _

حضرت امام مہدی علیہ السلام کے چار وکیل تھے جنھیں نواب اربعہ کہا جاتا ہے اور وہ جناب عثمان بن سعید ، محمد بن عثمان ، حسین بن روح اورعلی بن محمد تھے _

یہ چاروں ائمہ علیہم السلام کے مورد اعتماد اصحاب تھے اور یہ حضرات مذکورہ ترتیب سے ایک کے بعد وکیل ہوتے رہے _

ان حضرا ت کو نائب امام (ع) اور باب امام بھی کہا جاتا تھا _ حضرت اما م مہدی علیہ السلام ان ہی کے ذریعہ لوگوں کی مشکلات کو حل کیا کرتے تھے اور لوگوں کے خطوط کے جواب دیتے تھے اور کبھی خود بھی ان وکیلوں کو خط لکھ دیا کرتے تھے یہ سلسلہ چوتھے نائب کی وفات تک جاری رہا کہ جن کانام علی بن محمد ہے انہوں نے اپنی وفات سے کئی دن پہلے وہ خط جوان کے پاس امام زمانہ (ع) کی طرف سے آیا تھا لوگوں کو دکھلایا

۲۸۸

اس خط میں یہ تحریر تھا:

'' اے علی بن محمد ، خداوند عالم تیرے وفات کا اجر تیرے دوستوں کے لئے زیادہ کرے تم جان لو کہ چھ دن کے بعد اس دنیا سے رخصت ہوجاؤ گے لہذا اپنے کاموں کو صحیح کرلو اور اپنا جانشین کسی کو معین نہ کرنا کیونکہ اب غیبت کبری کا زمانہ آگیا ہے اس کا سلسلہ طویل رہے گا اور میں اذن الہی سے ظہور کروں گا ''_

علی بن محمد نے یہ خط شیعوں کو دکھایا اور چھ دن کے بعد آپ کا انتقال ہوگیا اس وقت سے غیبت کبری کا زمانہ شروع ہوگیا _

خداوند عالم نے اپنی قدرت کاملہ سے امام زمانہ (ع) کو ایک طویل عمر عنایت فرماری ہے آپ کو حکم دیا ہے کہ آپ غیبت میں زندگی بسر کریں اور ضرورت کے وقت تمام مسلمانوں کی مددبھی کرتے رہیں اور پاک دلوں کی خداوند عالم کی طرف ہدایت بھی کرتے رہیں موجودہ دور میں امام زمانہ (ع) نظروں سے غائب ہیں لیکن پھر بھی لوگوں کے درمیان آمد و رفت رکھتے ہیں ، لوگوں کی مدد کرتے ہیں ، اپنے فرائض کو انجام دیتے رہتے ہیں اور لوگوں کو فیض پہونچاتے رہتے ہیں _

پیغمبر اسلام(ص) سے سوال کیا گیا کہ لوگ بارہویں امام (ع) کی غیبت کے زمانہ میں آپ سے کس طرح فائدہ حاصل کر سکیں گے ؟ تو آپ (ع) نے اس کا جواب دیا کہ :

'' جیسے سورج سے اس پر بادل چھا جانے کے بعد لوگ فائدہ حاصل کرتے ہیں اسی طرح امام زمانہ (ع) سے غیبت کے زمانہ میں فائدہ حاصل کریں گے ''_

اگر امام زمانہ (ع) آشکا ر طور سے لوگوں کے درمیان زندگی گذارتے تو تو ظالموں کے

۲۸۹

ہاتھوں قتل کردیئےاتے کیونکہ پیغمبر اور ائمہ معصومین علیہم السلام نے لوگوں کو پہلے ہی سے خبر دی تھی کہ :

'' مہدی موعود (ع) ، قائم آل محمد (ص) ظالموں و طاغوتوں کے سخت دشمن ہوں گے اور اپنے وفادار دوستوں کے ذریعہ ایک سخت انقلاب بر پا کرکے ظالموں کے تخت کو ساری دنیا میں الٹ دیں گے _

محروم اور مستضعف طبقے کی حکومت اس جان میں برپا کریں گے اور توحید و خداپرستی کے کامیاب پرچم کو تمام جہان پر بلند کردیں گے '' _

ظالموں اور طاغوتوں نے یہ بات سن رکھی تھی اور وہ خوف و ہراس سے ایسے شخص کی تلاش میں رہا کرتے تھے _ اگر آپ لوگوں میں آشکار طور پر زندگی گذارتے تو قبل اس کے کہ آپ اپنے وفادار ساتھی بناتے اور انقلاب جہانی کے مقدمات فراہم کرتے ، ظالموں کے ہاتھوں قتل کردیئےاتے اور زمین حجت خدا سے خالی ہوجاتی _

لیکن آج آپ پردہ غیبت میں ہیں اور شیعہ آپ کے ظہور کے منتظر ہیں ، آپ کی عالمی اسلامی حکومت کیلئے زمین ہموار کررہے ہیں اور اس امید پر کوشش کررہے ہیں کہ آپ کے نورانی چہرہ کے دیدار کے ساتھ اپنی اور پورے عالم کی اصلاح آپ کے ذریعہ سے ہوگی _

امام زمانہ (ع) کا غیبت کبری میں نائب ، فقیہ عادل ہوتا ہے جو قانون و احکام دین کو بتاتا ہے ، قرآن کے قانون اور عالم اسلام کا رہبر و محافظ ہوتا ہے لہذا تمام مسلمانوں

۲۹۰

پر فرض ہے کہ اس کے حکم کو قبول کریں تا کہ امام زمانہ (ع) کی زیارت کرنے کے لائق ہوسکیں _

قرآن کی آیت :

( و نرید ان نمن علی الذین استضعفوا فی الارض و نجعلهم ائمة و نجعلهم الوارثین ) (۱)

'' اور ہم تو یہ چاہتے ہیں کہ جو لوگ روئے زمین پرکمزور کردیئےئے ہیں ان پر احسان کریں اور ان ہی کو پیشوا بنائیں اور ان ہی کو اس سرزمین کا مالک بنائیں ''

____________________

۱_ سورہ قصص آیت نمبر ۵

۲۹۱

سوالات

سوچئے اور جواب دیجئے

۱_ کیا بتا سکتے ہیں کہ کیوں امام زمانہ (ع) کی ولادت مخفی سے ہوئی ؟

۲_ امام جعفر صادق علیہ السلام نے بارہویں امام (ع) کی دو غیبت کے متعلق کیا فرمایا ہے ؟

۳_ امام زمانہ (ع) کی غیبت صغری کتنی مدت تک رہی اور اس زمانہ میں امام (ع) کا لوگوں کے ساتھ کیسے رابطہ ہوتا تھا؟ آپ کے نائب کون تھے اور ان میں آخری نائب کون تھا؟

۴ _ امام زمانہ (ع) کی غیبت میں کیا ذمہ داری ہے ؟ لوگ کس طرح غیبت کے زمانہ میں امام علیہ السلام کے وجود سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں ، پیغمبر اسلام (ص) نے اس سلسلہ میں کیا فرمایا ہے؟

۵_ غیبت کبری کے زمانہ میں امام زمانہ (ع) کا نائب کون ہے؟

۶___ غیبت کے زمانہ میں لوگوں کا رابطہ رہبر کے ساتھ کیسا ہونا چاہئے؟

۷___ آپ جانتے ہیں کہ امام زمانہ (ع) کی پیدائشے کے دن کو کیا کہتے ہیں اور کیوں ؟

ترجمہ ختم کیا شب پنجشنبہ سنہ ۱۴۰۵ اختر عباس

۲۹۲

فہرست

عرض ناشر ۴

اہداء ۶

پہلا حصّہ ۷

جہاں کا خالق خدا ۷

کائنات کی تخلیق میں ہم آہنگی کس بات کا ثبوت ہے؟ ۸

سوالات ۱۴

دنیا میں پانی کی گردش ۱۵

سوالات ۱۸

ایمان او رعمل ۱۹

سوالات ۲۳

بہترین سبق ۲۴

سوالات ۲۹

اپنے آپ کو دیکھیں ۳۳

مثانہ گردےونیرنالی وگردے: ۳۴

۲)نیرنالی : ۳۴

۳) مثانہ: ۳۴

۴) پیشاب کے خارج ہونے کا راستہ: ۳۵

قرآن کی آیت : ۳۸

سوالات ۳۹

۲۹۳

جواب دیجئے ۳۹

خالق جہان کے صفات کمالیہ ۴۰

قرآن مجید کی آیت: ۴۳

توحید اور شرک ۴۴

قرآن مجید کی آیت: ۴۷

سوالات ۴۸

عدل خدا ۴۹

ایک سوال ۵۳

جواب ۵۳

اس بحث کا خلاصہ اور تکمیل ۵۴

قرآن مجید کی آیت: ۵۵

سوچئے اور جواب دیجئے ۵۶

دوسرا حصّہ ۵۷

آخرت کے مسائل کے بارے میں ۵۷

(۱) عمل کا ثمر ۵۸

خلاصہ ۶۱

سوالات: ۶۲

(۲) عمل کا ثمر ۶۴

سوالات ۶۹

آخرت کی طرف منتقل ہونا ۷۰

۲۹۴

آیت قرآن مجید: ۷۴

سوالات ۷۵

تذكّر: ۷۵

قرآن کی آیت: ۷۸

سوالات ۷۹

نامہ اعمال ۸۰

الحاصل: ۸۲

آیت قرآن کریم ۸۵

سوالات ۸۶

سوچئے اور جواب دیجئے ۸۶

قیامت کا منظر ۸۸

قیامت کا منظر ۸۸

برزخ اور قیامت ۹۱

برزخ اور قیامت ۹۱

آیت: ۹۳

سوالات ۹۴

غور کیجئے اور جواب دیجئے ۹۴

تیسرا حصّہ ۹۵

پیغمبری اور پیغمبروں کے مسائل کے بارے میں ۹۵

پہاڑ کی چوٹی پر درس ۹۶

۲۹۵

سوالات ۱۰۳

پیغمبر یا آخرت کے سفر کے راہنما ۱۰۵

سوالات ۱۰۹

فکر کیجئے، بحث کیجئے اور صحیح جواب تلاش کیجئے ۱۰۹

پیغمبروں کی انسان کو ضرورت ۱۱۰

چند ایک سوال ۱۱۱

قرآن کی آیت: ۱۱۲

سوالات ۱۱۴

سوچیئےور جواب دیجئے ۱۱۴

پیغمبری میں عصمت ، شرط ہے ۱۱۵

پیغمبری میں عصمت ، شرط ہے ۱۱۵

سوالات ۱۱۶

قرآن کی آیت: ۱۱۷

سوالات ۱۱۸

سوچیئے اور جواب دیجئے ۱۱۸

قرآن کی آیت: ۱۲۳

سوالات ۱۲۴

سوچیئےور جواب دیجیئے ۱۲۴

تحقیق اور تکمیل: ۱۲۷

قرآن کی آیت: ۱۲۸

۲۹۶

سوالات ۱۲۹

سوچیئے اور جواب دیجیئے ۱۲۹

مرکز توحید (۱) ۱۳۰

قرآن کی آیت ۱۳۲

مرکز توحید (۲) ۱۳۳

قرآن کی آیت : ۱۳۶

سوالات ۱۳۷

دین یہود ۱۳۸

سوالات ۱۴۲

سوچیئے اور جواب دیجئے ۱۴۲

دین عیسی علیہ السلام ۱۴۳

قرآن مجید کی آیت: ۱۴۷

سوالات ۱۴۸

سوچیئے اور جواب دیجیئے ۱۴۸

قرآن اللہ تعالی کی ہمیشہ رہنے والی کتاب ہے ۱۴۹

قرآن مجید کی آیت: ۱۵۳

سوالات سوچیئے اور جواب دیجیئے ۱۵۴

اگر نعمت کی قدرت نہ کریں ۱۵۵

آیت قرآن: ۱۵۸

سوالات ۱۵۹

۲۹۷

چوتھا حصّہ ۱۶۰

پیغمبر اسلام (ص) اور آپ کے اصحاب کے بارے میں ۱۶۰

پیغمبر اسلام(ص) کی مخفی تبلیغ ۱۶۱

پیغمبر اسلام(ص) کی مخفی تبلیغ ۱۶۱

قرآن مجید کی آیت: ۱۶۴

عالمی دعوت کا اعلان ۱۶۶

قرآن کی آیت: ۱۶۹

سوالات ۱۷۰

ہر قسم کی سازش کی نفی ۱۷۱

قرآن کی آیت: ۱۷۶

سوالات ۱۷۷

پیغمبر (ص) اور مستضعف ۱۷۸

پیغمبر(ص) کی رفتار اور اخلاق: ۱۸۲

سوالات ۱۸۵

سوچیئے اور جواب دیجئے ۱۸۵

پانچواں حصّہ ۱۸۶

اسلام اور اس کے سیاسی و اجتماعی اور اخلاقی امور ۱۸۶

اسلام کی عظیم امّت ۱۸۷

اسلام کی عظیم امّت ۱۸۷

اسلامی سرزمین سے د فاع کرنا: ۱۸۸

۲۹۸

مشترک دشمن کے مقابل مسلمانوں کا اتحاد: ۱۸۹

جہان اسلام کی وحدت اور استقلال کی حفاظت: ۱۹۰

متجاوز سے نمٹنے کا طریقہ: ۱۹۱

قرآن مجید کی آیت: ۱۹۲

سوالات ۱۹۳

سوچیئے اور جواب دیجئے ۱۹۳

اجتہاد اور رہبری ۱۹۴

سوالات ۱۹۸

سوچیئے اور جواب دیجیئے ۱۹۸

قانون میں سب مساوی ہیں ۱۹۹

توضیح اور تحقیق: ۲۰۳

قرآن کی آیت: ۲۰۴

سوالات ۲۰۵

اسلام میں برادری ۲۰۷

سوالات ۲۱۰

سوچیئے اور جواب دیجئے ۲۱۰

اسلام اور مساوات ۲۱۱

قرآن مجید کی آیات: ۲۱۴

سوالات ۲۱۵

سوچیئے اور جواب دیجئے ۲۱۵

۲۹۹

ظالموں کی مدد مت کرو ۲۱۶

توضیح اور تحقیق: ۲۱۹

سوالات ۲۲۲

اسلام میں جہاد اوردفاع ۲۲۳

فداکار اور جری خاتون: ۲۲۵

سوالات ۲۲۹

سوچیئے اور جواب دیجئے ۲۲۹

پیغمبر اسلام (ص) کی حدیث شریف: ۲۳۷

سوالات ۲۳۸

سوچیئےور جواب دیجئے ۲۳۸

شہیدوں کے پیغام ۲۳۹

سوالات ۲۴۷

سوچویے اور جواب دیجئے ۲۴۷

پروردگار ۲۵۰

الہی ۲۵۱

خداوندا ۲۵۱

خدایا ۲۵۱

پروردگارا ۲۵۲

سوالات ۲۵۳

ان سوالات کے جوابات دیجیئے ۲۵۳

۳۰۰