زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں)

زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں) 0%

زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں) مؤلف:
زمرہ جات: امام مہدی(عجّل اللّہ فرجہ الشریف)

زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں)

یہ کتاب برقی شکل میں نشرہوئی ہے اور شبکہ الامامین الحسنین (علیہما السلام) کے گروہ علمی کی نگرانی میں اس کی فنی طورپرتصحیح اور تنظیم ہوئی ہے

مؤلف: حجت الاسلام محسن قرائتی
زمرہ جات: مشاہدے: 596
ڈاؤنلوڈ: 145

تبصرے:

زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں)
کتاب کے اندر تلاش کریں
  • ابتداء
  • پچھلا
  • 24 /
  • اگلا
  • آخر
  •  
  • ڈاؤنلوڈ HTML
  • ڈاؤنلوڈ Word
  • ڈاؤنلوڈ PDF
  • مشاہدے: 596 / ڈاؤنلوڈ: 145
سائز سائز سائز
زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں)

زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں)

مؤلف:
اردو

یہ کتاب برقی شکل میں نشرہوئی ہے اور شبکہ الامامین الحسنین (علیہما السلام) کے گروہ علمی کی نگرانی میں اس کی فنی طورپرتصحیح اور تنظیم ہوئی ہے

یہ کتاب برقی شکل میں نشرہوئی ہے اور شبکہ الامامین الحسنین (علیہما السلام) کے گروہ علمی کی نگرانی میں اس کی فنی طورپرتصحیح اور تنظیم ہوئی ہے

زندگی مہدوی (دعاۓ عہد کے سایہ میں)

تالیف:حجۃ الاسلام استاد محسن قرائتی حفظہ اللہ

ترجمہ: سید محمود موسوی

تصحیح :مولانامصطفی فخری

انتساب

میں اپنی یہ ناچیز کاوش ، وارث علم کردگار، حامل علم رسول مختار،

ناظر گردش لیل و نہار، شیعیت کی محور و مدار ، نور چشم صاحب ذوالفقار،

قائم آل محمد یوسف زہرا علیہا السلام ،حضرت حجت ،

امام زمانہ عجل اللہ فرجہ الشریف

کی پاک بارگاہ میں پیش کر کے قبولیت کا متمنی ہوں۔

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

مقدمہ :

وہ دعائیں کہ جن کو امام زمان علیہ السلام کے غیبت کے زمانے میں پڑھنے کی سفارش ہوئی ہے ان میں ایک دعائے عہد ہے ۔امام جعفر صادق علیہ السلام اس دعا کے بارے میں فرماتے ہیں :

مَنْ‏ دَعَا إِلَى‏ اللَّهِ‏ أَرْبَعِينَ صَبَاحاً بِهَذَا الْعَهْدِ كَانَ مِنْ أَنْصَارِ قَائِمِنَا عَلَيْهِ السَّلَامُ، فَإِنْ مَاتَ قَبْلَهُ أَخْرَجَهُ اللَّهُ تَعَالَى مِنْ قَبْرِهِ، وَ أَعْطَاهُ اللَّهُ بِكُلِّ كَلِمَةٍ أَلْفَ حَسَنَةٍ، وَ مَحَا عَنْهُ أَلْفَ سَيِّئَةٍ، ۔(۱)

امام فرماتے ہیں کہ جو شخص چالیس دن صبح کے وقت اس دعا کو پڑھے گا تو وہ امام زمانہ علیہ السلام کے مددگاروں میں سے ہوگا اور اگر وہ امام کے ظہور سے پہلے مرجائے تو خدا وند متعال اسے زندہ کرے گا تاکہ امام علیہ السلام کے ہم رکاب ہوکر جنگ کر سکے اور اس کے ہر کلمہ کے بدلے میں ہزار حسنات لکھے گا اور ہزار خطاؤں کو محو کرے گا ۔

یہ دعا دنیا اور آخرت دونوں میں بہت ہی آثار اور برکات کے حامل ہے امام خمینی کے قریبی ساتھیوں میں سے ایک کہتے ہیں کہ ایک چیز جسے امام خمینی نے اپنے آخری ایام میں مجھے وصیت کی ، وہ دعائے عہد کی تلاوت کے بارے میں تھی آپ فرماتے تھے کہ صبح کے وقت اس کی تلاوت کیا کرو کیونکہ یہ آپ کے تقدیر سنورنے میں دخالت رکھتی ہے ۔(۲)

اسی طرح ان کی سیرت میں بھی ملتا ہے کہ جب آپ بیمار ہو کر ہسپتال میں داخل تھے تب بھی آپ قرآن اور مفاتیح کی تلاوت کرتے رہتے تھے جب آپ کے انتقال کے بعد آپ کے مفاتیح کو دیکھا تو آپ نے دعاے عہد پر نشان لگا کر رکھا تھا ۔(۳)

دعاے عہد کی مسلسل تلاوت کرنے کے اہم ترین آثار اور برکات میں علماء نے تین چیزیں بیان کئے ہیں جو مندرجہ ذیل ہیں ۔(۴)

۱ ۔ اسے اس شخص کا ثواب دیا جائے گا جو امام زمانہ علیہ السلام کے ظہور کے وقت اس کے خدمت میں ہو ۔

۲ ۔ انسان کی ایمان اور اخلاص اور محبت میں اضافہ ہوتا ہے ۔

۳۔ اور دعا کرنے والے پر امام زمانہ علیہ السلام کی خاص توجہ اور عنایت ہوتی ہے ۔

اور اسی طرح سے اس دعا میں امام زمان علیہ السلام کی زندگی کی تصویر کشی کی گئی ہے چونکہ یہ دعا کرنے والے کی طرف سے ایک خصوصی درود و سلام پر مشتمل ہے اور دنیا کے مشرق ومغرب اور خشکی و دریا اور ہر شہر و بستی میں رہنے والے تمام مؤمنین و مؤمنات اور ہمارے والدین کی طرف سے امام زمانہ علیہ السلام کی خدمت میں خصوسی درود و سلام پر مشتمل ہے ۔ اسے پڑھنے کے بعد انسان اپنے زمانے کے امام کے ہاتھوں پر بیعت کرتا ہے اور اپنی اس عہد و پیمان پر قیامت تک ثابت قدم رہنے کا اظہار کرتا ہے ۔

اور اس وقت خداوند عالم سے دعا کرتا ہے کہ اگر اس کی موت امام زمان کے ظہور سے پہلے واقع ہو جائے تو امام کی ظہور کے بعد اسے دوبارہ زندہ کرے تاکہ امام زمانہ کی مدد کا شرف حاصل کرسکے ۔

اور امام زمانہ کے ظہور میں تعجیل اور اسکی حکومت قائم ہونے اور دنیا کی حالت سدھر نے اور دین کی حقیقت آشکار ہونے کے لئے دعا کرنا بھی اس دعا کا آخری حصہ ہے ۔یہ دعا آٹھ حصوں پر مشتمل ہے ہم ان کے بارے میں بحث کریں گے ۔