سيرت آل محمد(عليهم السلام)

سيرت آل محمد(عليهم السلام)0%

سيرت آل محمد(عليهم السلام) مؤلف:
زمرہ جات: متفرق کتب

سيرت آل محمد(عليهم السلام)

مؤلف: آیۃ اللہ شهید مرتضيٰ مطہرى
زمرہ جات:

مشاہدے: 4412
ڈاؤنلوڈ: 559

تبصرے:

سيرت آل محمد(عليهم السلام)
کتاب کے اندر تلاش کریں
  • ابتداء
  • پچھلا
  • 19 /
  • اگلا
  • آخر
  •  
  • ڈاؤنلوڈ HTML
  • ڈاؤنلوڈ Word
  • ڈاؤنلوڈ PDF
  • مشاہدے: 4412 / ڈاؤنلوڈ: 559
سائز سائز سائز
سيرت آل محمد(عليهم السلام)

سيرت آل محمد(عليهم السلام)

مؤلف:
اردو

یہ کتاب برقی شکل میں نشرہوئی ہے اور شبکہ الامامین الحسنین (علیہما السلام) کے گروہ علمی کی نگرانی میں تنظیم ہوئی ہے

سیرت آل محمد- (علیہم السلام)

مؤلف : مطہری، مرتضی (آیۃ اللہ شہید)

مترجم / مصحح : عابد عسکری

ناشر : ادارہ منہاج الصالحین

نشر کی جگہ : لاہور (پاکستان)

نشر کا سال : ۲۰۰۳

جلدوں کی تعداد : ۱

صفحات : ۱۹۹

سائز : رقعی

زبان : اردو

حرف ناشر

کتاب "سیرت آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم " پیش خدمت ہے یہ کتاب ایک مقدمہ اور آٹھ فصول پر مشتمل ہے ۔اس کا فارسی نام"سیری در سیرہ آئمہ اطہارعليه‌السلام "تھا اور یہ ایران کے معروف نشریاتی ادارے انتشارات صدرا"کی شائع کردہ ہے ۔ھم نے اردو زبان پڑھنے اور سمجھنے والے قارئین کی آسانی اور تشفئی ذوق کے لئے اس کا نام سیرت آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم رکھا ہے ۔یہ کتاب ایران میں اب تک بیس مرتبہ شائع ہو چکی ہے۔ یوں تو شھید مطھری (رح) کی تمام کتب وقیع اور گرانقدر ہیں لیکن اس کتاب کی اپنی ایک الگ خوشبوھے ۔اس کا مطالعہ کرنے سے نئے نئے مطالب سامنے آتے ہیں ۔آپ جس امامعليه‌السلام کی بھی سیرت کا مطالعہ کریں گے آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم کی پاکیزگی کردار کو دیکھ کر حیران رہ جائیں گے ۔یہ کتاب جھاں علمی کتب کے مطالعہ کے شائقین کے لیئے تاریخی معلومات کا سبب بنتی ہے وہاں آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم سے عقیدت و محبت میں اضافہ اور تازگی ایمان کا باعث بنتی ہے ۔یہ خوبصورت اور معلوماتی کتاب آیتہ اللہ شھید مطھری (رح) کی فکر انگیز تقاریر کا مجموعہ ہے آپ نے مختلف مقامات پر مختلف خطابات کئے تھے۔ انتشارات صدرا کی محترم انتظامیہ نے ان تقاریر کو اکٹھا کر کے ایک کتاب کی صورت میں شائع کردیا اور یوں ایک بہت بڑا علمی ذخیرہ ہمیشہ کے لیئے محفوظ کردیا گیا ۔پہلی فصل میں حضرت علی علیہ اسلام کی مشکلات پر روشنی ڈالی گئی ۔جناب امیر المومنینعليه‌السلام کی سیرت طیبہ اور آپ کا صبر واستقامت اور دیگر بے شمار خوبیوں کو پڑھ کر انسان دم بخود رہ جاتا ہے اور بیساختہ زبان سے جو جملہ نکلتا ہے وہ یہ ہے کہ"علیعليه‌السلام سازمانہ میں کوئی نہیں ہے"۔

چوتھی فصل میں امام جعفر صادق علیہ اسلام کے بارے میں بحث کی گئی ہے کہ فقہ جعفریہ کے اس جلیل القدر تاجدار نے علمی ودینی اور تحقیقی فکری حوالے سے ایسے ایسے کارنامے انجام دیئے کہ روح محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم پکار اٹھی کہ جعفر صادقعليه‌السلام جیتے رہو ۔شھید مطھری (رح) نے امام رضاعلیہ السلام کی سرزمین خراسان میں تشریف آوری اور ولی عھدی کے مسئلہ کو جس خوبصورت انداز میں پیش کیا ہے وہ اپنی مثال آپ ہے ۔پھر آپ نے امام موسی کاظم علیہ اسلام کی مجاہدت اور طویل اسیرانہ زندگی کو اس طرح بیان کیا ہے کہ راہ حق کی خاطر قید ہونے والے شرم کی بجائے فخر محسوس کرنے لگیں ۔ھم سلام پیش کرتے ہیں ان مجاہد اسیروں کو جو مذھب آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم کی خاطر ایک طویل عرصہ سے پابند سلاسل ہیں۔ اس کے بعد دیگر ائمہ طاہر ین علیھم السلام کی سیرت طیبہ کو دوسرے مورخین اور تجزیہ نگاروں سے ھٹ کر پیش کیا ہے ۔دشمنان اہلبیتعليه‌السلام نے غلط پرو پیگنڈہ کر کے تاریخی فضا کو مسموم کردیا تھا ۔شھید مطھری (رح) کی یہ فکر انگیز تقاریر پڑھنے سے تعلق رکھتی ہیں "اگر چہ سیرت اہلبیتعليه‌السلام کو بیان کرنا اور اس کو کما حقّہ، حیطئہ تحریر میں لانا بشری طاقت سے باہر ہے تاہم ہم نے سمندر میں سے ایک قطرے کو سامنے لاکر مذھب حقہ کی خدمت کرنے کی ایک ناچیز سی کوشش کی ہے۔ آخر میں ہم ممتاز دانشور علامہ عابد عسکری فاضل قم دامہ ظلہ کے شکر گزار ہیں کہ جنھوں نے سیرت آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم کا آسان اور سلیس ترجمہ کرکے ملت جعفریہ کی علمی خدمت کا حق ادا کردیا ہے ۔موصوف ایک صاب طرز اور نئے اسلوب کے مالک باصلاحیت لکہاری ہیں۔امید کی جاتی ہے کہ آل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم کیصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم کی محبت کے اسیر اور علی (محمد محمد کی محبت کے اسیر اور علیعليه‌السلام علیعليه‌السلام کا دم بھرنے والے مومنین کرام اس کتاب کو پسند فرمائیں گے جھاں تک علوم محمد و مومنین کرام اس کتاب کو پسند فرمائیں گے جھاں تک علوم محمد وآل محمدصلى‌الله‌عليه‌وآله‌وسلم کا پیغام پھیلاناتھا اس کے لئے ہم نے حتی الامکان اپنا فرض پورا کردیا ہے اب موجودہ اور آنے والی نسلوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس سے کس طرح استفادہ کرتے ہیں اور کس طرح اس پر عمل پیرا ہوتے ہیں ۔اللہ تعالی ہماری اس کاوش کو قبول فرمائے۔ شہید مطہری (رہ) کے درجات بلند فرمائے "اور ہمیں توفیق دے کی ہم اس سلسے میں مزید کام کرتے رہیں (آمین)

دعا گو: ریاض حسین جعفری، لاہور