ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق

ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق0%

ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق مؤلف:
زمرہ جات: گوشہ خاندان اوراطفال
صفحے: 299

ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق

مؤلف: ‏آیة الله ابراهیم امینی
زمرہ جات:

صفحے: 299
مشاہدے: 22844
ڈاؤنلوڈ: 1290

تبصرے:

ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق
کتاب کے اندر تلاش کریں
  • ابتداء
  • پچھلا
  • 299 /
  • اگلا
  • آخر
  •  
  • ڈاؤنلوڈ HTML
  • ڈاؤنلوڈ Word
  • ڈاؤنلوڈ PDF
  • مشاہدے: 22844 / ڈاؤنلوڈ: 1290
سائز سائز سائز
ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق

ازدواجى زندگى كے اصول يا خاندان كا اخلاق

مؤلف:
اردو

كس طرح ممكن ہے كہ جس شہر ميں ان كو پوسٹنگ ہوئي ہے وہاں نہ جائيں _ يا اگر ان كا پيشہ تجارت ہے يا مزدورى ہے اور پرديس ميں زيادہ بہتر طريقے سے كماسكتے ہيں توان كى ترقى كى راہ ميںكيوں ركاوٹ ڈالتى ہيں جب آپ كو معلوم ہے كہ آپ كے شوہر وطن سے باہر زندگى گزارنے پر كسى سب سے مجبور ہيں تو بلاوجہ بہانے اوراعتراضات كركے كيوں ان كى ناراضگى اور پريشانى كے اسباب فراہم كرتى ہيں _ جب ديكھيں كہ ملازمت كے سلسلے ميں انھيں كسى دوسرے شہر ، ديہات يا غير ملك ميں منتقل ہونا ہے تو آپ كا فرض ہے كہ فوراً اپنى رضامندى كا اظہار كيجئے ، خوشى خوشى گھر كے سازوسامان كى پيكنگ ميں لگ جايئےور پورے سكون و اطمينان كے ساتھ نئي جگہ كے لئے روانہ ہوجائے _ اپنے آپ كو اسى جگہ كا سمجھئے اور سرگرمى اور تن وہى كے ساتھ اپنى زندگى كا آغاز كيجئے _ اپنے ماحول اور حالات سے سمجھوتہ كرنا سيكھئے _ خوش اخلاقى اور خوش بيانى كے ذريعہ لوگوں كو اپنا دوست بنايئے چونكہ آپ يہاں نئي ہيں اس لئے اس علاقے كے لوگوں كے عادات و اخلاق سے پورى طرح واقف نہيں لہذا نئے دوستوں كے انتخاب ميں احتياط سے كام ليجئے اور اس سلسلے ميں اپنے شوہر سے بھى مشورہ ليجئے _ اپنے آپ كو تنہا محسوس نہ كيجئے _ بلكہ نئے ماحول اور وہاں كے لوگوں سے آشنا ہونے اورمانوس ہونے كى كوشش كيجئے _ ہر جگہ كى كچھ خاص خصوصيات ہوتى ہيں آپ وہاں كے فطرى مناظر يا قابل ديد مقامات كى سير كركے اپنى تنہائي دور كرسكتى ہيں _ مہر و محبت كا اظہر كركے اپنے گھر كے ماحول كو خوشگوار بنايئے اپنے شوہر كى دلجوئي كيجئے _ ان كے مشاغل اور كاموں ميں ان كى حوصلہ افزائي كيجئے _ جب آپ نئے ماحول سے آشنا ہوجائيں گى تو آپ خود محسوس كريں گى كہ يہاں بھى كچھ برا نہيں بلكہ شايد وطن سے يہاں زيادہ بہتر ہے نئے لوگوں ميں ايسا افراد تلاش كيجئے جو پرانے دوستوں بلكہ ماں باپ اور عزيز و اقارب سے زيادہ مہربان اور ہمدرد ہوں _ اگر قصہ يا ديہات ميں آپ كا قيام ہے جہاں شہرى زندگى كى سہولتيں اور آسائشے كا سامان ميسر نہيں ہے تو خود كو ان چيزيوں كى قيد سے آزاد كر ليجئے وہاں كى فطرى اور صاف ستھرى زندگى سے انسيت پيدا كيجئے اور اس قسم كى زندگى كى خوبيوں پر توجہ كيجئے _ يہاں اگر چہ بجلى پنكھا ، كولر، فريج و غيرہ نہيں ہے ليكن صاف اور تازہ آب و ہوا اور بلا

۶۱

ملاوٹ كى اصلى غذائيں ہيں جو شہروں ميں كم ميسر ہوتى ہيں _ پكى سڑكيں اور ٹيكسى نہيں ہے ليكن گاڑيوں اور كارخانوں كے دھوئيں اور شور و غل سے آپ محفوظ ہيں _

تھوڑى ديركے لئے اپنے آس و پاس كے لوگوں كى زندگيوں پر نظر ڈالئے ديكھئے كس طرح معمولى كچے مكانوں ميں نہايت خوشى اور اطمينان و سكون كيسا تھ زندگى گزارتے ہيں اور شہرى زندگى كے لوازمات اور خوبصورت محلوں كى ذرا بھى پروا نہيں كرتے _ ان كى ضروريات اور محروميوں كو ديكھئے اور اگر آپ كوئي خدمت انجام دے سكتى ہيں تو اس سے ہرگز دريغ نہ كيجئے _ اپنے شوہر سے بھى سفارش كيجئے كہ ان كى آسائشے اور فلاح و بہبود كے لئے كوشش كريں _

اگر آپ دانشمندى سے كام لے كر اپنے فرائض پورے كريں تو نہايت سكون و آرام كے ساتھ پرديس ميں زندگى گزارسكتى ہيں اور اپنے شوہر كى ترقى ميں معاون ثابت ہوسكتى ہيں اور ايسى صورت ميں آپ نہايت شريف اور باوقار خاتون اور ايك وفادار بيوى كى حيثيت سے پہچانى جائيں گى _ اور آپ كے شوہر اور دوسروں كى نظروں ميں آپ كى عزت و محبت بڑھ جائے گى اور آپ كو خدا كى خوشنودى بھى حاصل ہوگى _

اگر آپ كے شوہر گھر ميں كام كرتے ہيں

جب مرد گھر باہر كام پر جاتا ہے تو اس كى بيوى اس كى غير موجودگى ميں آزاد رہتى ہے ليكن اگر گھر ميں كام كرتا ہے تو اس كى بيوى پابند ہوجاتى ہے _ شاعر ، مصنف ، مصور اور دانشور عموماً اپنے گھروں ميں ہى كام كرتے ہيں اور ہميشہ يا اپنے وقت كازيادہ حصہ ، اپنے كاموں ميں مصروف رہ كر گزارتے ہيں اور چونكہ ان كام كام اس قسم كا ہوتا ہے جس ميں پر سكوں ماحول كى اشد ضرورت ہوتى ہے _ ايك گھنٹہ پورے انہماك اور توجہ كے ساتھ كام كر نا كئي گھنٹے شور وہنگامے كا ماحول ميں كام كرنے سے بہتر ہوتا ہے ايسے موقع پر ايك بڑى مشكل پيدا ہوجاتى ہے _ ايك طرف مرد كو انتہائي پر سكون ماحول كى ضرورت ہوتى ہے دوسرى طرف بيوى چاہتى ہے كہ گھر ميں آزادانہ طور پر رہے _ اگر عورت چاہے تو گھر كے كاموں كو اس طرح انجام دے سكتى ہے كہ اپنے شوہر كے دماغى كاموں ميں مزاحم نہ ہو اوراس كا بڑا ايثار اور قابل قدر

۶۲

كارنامہ ہوگا كيونكہ ايك پر سكون ماحول فراہم كرنا آسان كام نہيں ہے خصوصاً ايسے گھر ميں جہاں بچے موجود ہوں _ اس كے لئے نہايت ايثار و تدبر كى ضرورت ہے اگر چہ كام مشكل ضرور ہے ليكن مرد كے مشغلے كے اعتبار سے نہايت ضرورى ہے _

اگر بيوى تعاون كرے تو اس كا شوہر سماج كا ايك نہايت مفيد اور باعزت فروبن سكتا ہے جو خود اس كے لئے بھى افتخار كا باعث ہوگا _ خواتين كو اس بات كو مد نظر ركھنا چاہئے كہ اگر چہ ان كے شوہر دائماً يا اكثر اوقات گھر ميں رہتے ہيں ليكن بيكار نہيں ہيں _ انھيں اس بات كى توقع نہيں ركھنى چاہئے كہ گھر كى گھنٹى بجے گى تو وہ دروازہ كھولنے جائيں ، بچوں كو سنبھاليں، گھر كے كاموں ميں ان كى مدد كريں يا شيطان بچوں سے پنٹيں گے بلكہ جسوقت مرد كام ميں مشغول ہوتو يہ فرض كرليناچاہئے گوياوہ گھر ميں موجود ہى نہيں ہيں _

خاتون محترم جب آپ كے شوہر اپنے مطالعہ كے كمرے ميں (يا جس كمرے ميں وہ اپنا كام انجام ديتے ہيں)جائيں تو ان كى ضرورت كى تمام اشياء مثلاً كتاب، كاغذ، قلم، كاپى ، پنسل ،سگريٹ، ماچس ، ايش ٹرےو غيرہ كى فراہمى ميں ان كى مدد كيجئے تاكہ ان چيزوں كى تلاش انھيں اپنے كام سے معطل نہ كردے _ اگر انگيٹھى ہيٹر يا پنكھے كى ضرورت ہو تو اسے مہيا كرديجئے _ جب ان كى ضرورت كا سب سامان مہيا ہوجائے تو كمرے سے آجايئےور انھيں تنہا چھوڑديجئے _ ان كے كمرے كے نزديك آہستہ سے چلئے _ زورزورسے بات نہ كيجئے _ دھيان ركھئے كہ بچے شور نہ مچائيں انھيں سمجھايئےہ يہ تمہارے كھيلنے كا وقت نہيں ہے كيونكہ تمہارے والد اس وقت كام ميں مشغول ہيں اور تمہارے شور و غل سے ان كے كام ميں خلل پڑے گا _ جب وہ كام ميں مشغول ہوں تو امور زندگى كے متعلق ان سے بات چيت نہ كيجئے كيونكہ ان كے خيالات كا تسلسل ٹوٹ جائے گا اور ان كے افكار پراكندہ ہوجائيں گے _ بے صدا جوتے پہنئے _ دروازے يا ٹيلى فون كى گھنٹى بجے تو فوراً جواب ديجئے تا كہ و ہ ڈسٹرب نہ ہوجائيں _ اگر كسى كو ان سے كام ہو تو كہديجئے كہ ابھى تو كام ميں مشغول ہيں ممكن ہو تو فلان وقت ٹيلى فون كرليجئے گا

۶۳

مہمانوں كى آمد ورفت كے پرو گرام بھى ايسے وقت ركھئے جب ان كے كام وفت نہ ہو _ آپ كے غريز و اقارب يا دوست جو ملنے كے لٹے آنا چاہيں ان سے بھى معذرت كر ليجئے كہ چونكہ ہمارى باتوں كے شور سے ہمارے شوہر كے كاموں ميں خلل پڑے گا لہذا براہ كرم فلاں وقت تشريف لايئے اگر وہ بھى آپ كے حقيقى دوست ہوں گے تو آپ كى بات كا برانہيں مانيں گے بلكہ آپ كے اس عمل سے كہ آپ كو اپنے شوہر ا كس قدر خيال ہے ، خوش ہوں گے اور آپ كى تعريف كريں گے _ جب امور خانہ دارى ميں مشغول ہوں اس وقت بھى اپنے شوہر كى ضروريات كا خيال ركھئے اگر كوئي چيز مانگيں تو فورا باہرا آجايئے شايد كچھ خواتيں اس قسم كى زندگى كو نا ممكن سمجھيں اور سوچيں كہ كيا ايك عورت كے لئے يہ ممكن ہے كہ گھر كے دشوار اور صبر آرنا كام بھى انجام دے اور ساتھ ہى شوہر كا بھى دھيان ركھے اور گھر ميں ايسا پز سكون ما حول پيدا كرے كاموں ميں ذرا سابھى خلل نہ پڑے ليكن يہ بات و ثوق كے ساتھ كہى جاسكتى ہے ، كہ اس قسم كى زندگى دشوار ضرور معلوم ہوتى ہے ليكن اگر آپ ان كے كاموں كى اہميت اور قدر وقيمت سے واقف ہو جائيں اور ايثار و كوشش سے كام لينے كا ارادہ كرليں تو اپنى دانشمند ى اور تدہرے اس مشكل كو حل كر سكتى ہيں _

ايك عورت كى لياقت و شائستگى ايسے ہى مو قعوں پر ظاخر ہوتى ہے ورنہ اسك عام زندگى تو ہر شخص گزار ليتا ہے _

خواہر عزيز ايك علمى كتاب يا ايك تحقيقى مقالہ لكھنا يا شعر كہنا يا ايك گراں قدر پينٹنگ تيار كرنا يا سائينس كے كسى مسئلہ كو حل كرنا آسان كام نہيں ہے البتخ آپ كے تعاون اور ايثار كے ذريعہ يہ مشكل كام آسان ہو جاتا ہے _

كيا اس سلسلے ميں آپ ايثار و قربانى كرنے كو تيار نہيں ہيں ؟ اور اپنى روزمرہ كى زندگى ميں معمولى سى تبديلى كر كے اپنے شوہر كو جس ميں ہر قسم كى لياقت موجود ہے ، سماج ميں ايك ايسے قابل قدر اور دانشورمردكى حيثيت نہيں دلا سكتيں كہ قوم ان كى خدمات سے استفادہ كرے _ آپ بھى تو اس كے

۶۴

نتيجہ ميں ہونے والے مادى منافع اور سماج ميں ان كے اعلى مقام سے بہرہ مند ہوں گى _

اپنے شوہر كى ترقى ميں مدد كيجئے

انسان اپنى صلاحيت اور قابليت كے مطابق ترقى كرتا ہے _ كمال سے محبت انسان كى سرشت ميں شامل ہے _ انسان تكميل كے لئے پيدا كيا گيا ہے _ ہر شخص ، ہر مقام پر، اور ہر حالت اور ہر سن وسال ميں ترقى كى منزليں طے كركے كامل ترين سكتا ہے اور يہى اس كى آفرينش كا مقصد ہے _ اس كو اپنى موجودہ حالت پر قناعت نہيں كرلينى چاہئے_ جب تك زندہ ہے اس كو كمال كى منزليں طے كرتے رہنا چاہئے _ ہر انسان ترقى كرنے كا خواہاں ہوتا ہے ليكن سب لوگ اس ميں كامياب نہيں ہوتے _ اس راہ ميں بلند ہمتى اور زبردست محنت و كوشش كى ضرورت ہوتى ہے _ راہ كو ہموار كركے ركاوٹوں كو دوركرنا چاہئے _ اس كے بعد كوشش كركے اپنے مقصد تك پہونچنا چاہئے _ مرد كى شخصيت بہت حد تك اس كى بيوى كى خواہش سے وابستہ ہوتى ہے _ عورت چاہے تو اپنے شوہر كى مدد كركے اس كو ترقى كى اعلى منزل تك پہونچانے ميں ہم كردار ادا كرسكتى ہے اور اسى طرح وہ چاہے تو اس كى ترقى كى راہ ميں بڑى ركاوٹ بھى بن سكتى ہے _

خواہر گرام